Home » 13 دسمبر کا لاہور کا جلسہ

13 دسمبر کا لاہور کا جلسہ

by ONENEWS

13 دسمبر کا لاہور کا جلسہ

بالاخر 13 دسمبر آئی اور پوری دنیانے دیکھا کہ کس قدر زور و شور سے پی ڈی ایم کا جلسہ ہوا، جلسے کے روز شہر لاہور میں افراتفری کا عالم تھا، جگہ جگہ شہر مختلف سیاسی جما عتوں کے کیمپ لگائے گئے تھے۔13 دسمبر کو دن بھر شہر لاہور میں سیاسی کارکنوں کی آمد و رفت رہی، سڑکوں پر گویا تل دھرنے کی جگہ تک نہ تھی اور یقینا طویل مدت بعد اہلیان لاہور نے متحدہ اپوزیشن کا جلسہ دیکھا۔ جی ہاں لاہور کے حالیہ جلسے کی خاص بات یہ تھی کہ  تمام سیاسی مخالفین  نے ایک ہی پنڈال میں ایک ہی اسٹیج پر مل کر دھواں دھار تقریریں کی اور اپوزیشن کے موجودہ اتحاد کو دیکھ کے نو ستاروں کا اتحاد بھی ذہن میں تازہ ہو گیا جی ہاں آئی جے آئی یعنی اسلامی جمہوری اتحاد جو کہ غالبا پیپلز پارٹی کی حکومت کے  خلاف تھا اور آج اپوزیشن جماعتیں ایک بار پھر کپتان کی حکومت گرانے کے لئے متحد ہو گئیں ہیں۔

بہر حال بات اپوزیشن اتحاد کے جلسے کی ہو رہی تھی اور یقینا اہلیان لاہور اپنے قائدین کی دھواں دھار تقریریں سن کے تالیاں بجاتے رہے اور لاہور جلسے میں ہی پی ڈی ایم قائدین نے اسلام اباد جانے کا اعلان کر دیا -یعنی کہ اب اسلام اباد کی طرف لانگ مارج کیا جائے گا۔ جبکہ  بہت سے دوستوں کو امید تھی کہ اپوزیشن قائدین استعفوں کے بارے بھی کچھ کہیں گے لیکن ایسا نہیں ہوا شائد اپوزیشن استعفے اسلام اباد لانگ مارچ کے بعد دے- لیکن بہت سے دوست تو برملا کہہ رہے ہیں کہ اپوڑیشن جماعتیں استعفے دینے کے  نہیں بلکہ استعفا استعفا کھیلنے کے موڈ میں نظر اتی ہیں۔ بہر حال اب اپوزیشن استعفے دے گی یا پھراستعفے  کے نام پر حکومت کو یونہی ستاتی رہے گی۔ اس بارے مین کچھ نہیں کہا جا سکتا لیکن جناب کپتان نے تو واضح کر دیا ہے کہ پی ڈی ایم جلسہ بلیک میلنگ ہے، جو مرضی حربہ استعمال کر لیں این ار او نہیں ملے گا اور حیرانی تو اس بات پہ بھی ہے کہ اپوزیشن رہنما بھی یہی کہہ رہے ہیں کہ حکومت کو این ار او نہیں دیں گے۔

اب یہ بات تو سمجھ سے بالا تر ہے کہ یہ کیا ماجرا ہے،بہر حال اس بارے میں ہم کیا کہہ سکپے ہیں لیکن بہت سیے دوست یہ بھی سوال اٹھا رہے ہیں کہ اب اپوزیشن کا لانگ مارچ اسلام اباد کے لئے شروع ہو گا لیکن کب یہ بھی عوام کو جلد بتا دیا جائے گا اور  بہت سے دوست تو یہ سوال بھی اٹھا رہے ہیں کہ آیا اپوزیشن کا لانگ مارج لانگ مارچ ہی رہے گا یا پھر دھرنے میں تبدیل ہو جائے گا اس بارے میں بھی بہت سی قیاس آرائیاں جاری ہیں بہر حال  جیسا کہ جناب فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ حکومت دسمبر میں رخصت ہو جائے گی لیکن ایسا ہوتا نظر نہیں اتا اور اسی لئے اب شاید اپوزیشن جلسوں سے تھک کر لانگ مارج کے چکر میں پڑ گئی ہے۔

بہر حال اب

اپو زیشن  کا لانگ مارچ کیا رنگ لائے گا  آیا اپوزیشن لانگ مارچ کے ذریعے

حکومت کی کشتی کو ڈبونے میں کامیاب ہو جائے گی اس بارے میں بھی کجھ کہنا قبل از وقت ہے۔ تو بہر حال دیکھنا تو  یہ بھی ہے کہ  اپوزیشن کے اسلام آباد مارچ  سے سیاسی ماحول میں کیا اتار چڑھاو آتا ہے؟ یہ بات بھی آنے والا وقت ہی بتا سکتا ہے۔ اس لئے یہ سب جاننے کے لئے وقت کا انتظار کریں لیکن ہمیں دیں اجازت  تو چلتے چلٹے اللہ نگھبان رب راکھا

مزید :

رائےکالم




Source

You may also like

Leave a Comment