Home » کیا واقعی واٹس ایپ کی انتظامیہ آپ کی فیملی کیساتھ گفتگو اور شیئرہونیوالی تصاویر بھی دیکھ سکتی ہے؟ بالآخر کمپنی نے باضابطہ موقف دیدیا

کیا واقعی واٹس ایپ کی انتظامیہ آپ کی فیملی کیساتھ گفتگو اور شیئرہونیوالی تصاویر بھی دیکھ سکتی ہے؟ بالآخر کمپنی نے باضابطہ موقف دیدیا

by ONENEWS

کیا واقعی واٹس ایپ کی انتظامیہ آپ کی فیملی کیساتھ گفتگو اور شیئرہونیوالی …

کیلیفورنیا (ڈیلی پاکستان آن لائن) معروف سماجی پلیٹ فارم واٹس ایپ کی تبدیلی اور نئی پالیسی کے بارے میں کئی دنوں سے افواہیں زیرگردش ہیں اور یہ بھی دعویٰ کیا جارہاہے کہ واٹس ایپ کی انتظامیہ نئی پالیسی کے تحت صارف کانام، موبائل نمبر، تصویر،چیٹس اور حتیٰ کہ لوکیشن بھی واٹس ایپ اور اس سے منسلک دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو مہیہ کرے گا لیکن اب اس پر کمپنی کا باضابطہ موقف آگیا ہے اور انہوں نے ایسی افواہوں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ ’ ہم کچھ افواہوں پر بات کرنا چاہتے ہیں اور یہ واضح رہے کہ ہم صارفین کے نجی پیغامات کو محفوظ کرنے کیلئے اینڈ ٹو اینڈ انکرپشن (end-to-end encryption) کیساتھ کام کررہے ہیں۔

واٹس ایپ نے اپنے فیس بک پیج پر پالیسی اپ ڈیٹ سے متعلق بتاتے ہوئے لکھا کہ ’ہماری پالیسی اپ ڈیٹ سے آپ کے دوستوں اور اہلخانہ کے ساتھ پیغامات کی رازداری پر کوئی فرق نہیں پڑے گا، اس سب کے باوجود پالیسی میں تبدیلی واٹس ایپ پر بزنس میسجنگ سے متعلق ہے جو کہ اختیاری ہے اور مزید شفافیت فراہم کرتی ہے کہ ہم کیسے ڈیٹا جمع اور استعمال کرسکتے ہیں۔

کمپنی نے واضح کیا کہ واٹس ایپ آپ نے نجی پیغامات یا کالزنہیں سن سکتا اور نہ ہی فیس بک یہ کرسکتاہے ۔

واٹس ایپ یہ بھی نہیں دیکھ سکتا کہ کون کسے کال یا میسج کررہاہے ۔

واٹس ایپ آپ کی شیئرکی گئی لوکیشن دیکھ سکتا ہے اور نہ ہی فیس بک ۔

واٹس ایپ کے رابطوں کی تفصیلات بھی فیس بک کیساتھ شیئر نہیں کرتا۔

واٹس ایپ گروپ پرائیویٹ ہی رہیں گے ۔

آپ اپنے پیغامات غائب ہونے کے آپشن کا انتخاب کرسکتے ہیں۔

آپ اپنا ڈیٹا خود ڈاﺅن لوڈ بھی کرسکتے ہیں۔

یقینا آپ کے ذہن میں یہ سوال ہوگا کہ آخر یہ بزنس میسجنگ کیا ہے اور کس طرح فیس بک کیساتھ کام ہوتا ہے ۔ کمپنی نے بتایا کہ ہر روز دنیا بھر سے دسیوں لاکھ افراد ہرطرح کے کاروبار کے بارے میں واٹس ایپ پر محفوظ رابطے کرتے ہیں ، اگر آپ کاروبار ی میسجز کا انتخاب کرتے ہیں تو ہم اسے مزید آسان اور بہتر بناناچاہتے ہیں ، یہ واضح ہے کہ جب آپ کاروباری سطح پر کسی سے رابطہ کررہے ہیں تو نئی پالیسی کے فیچرز استعمال ہوں گے ۔ یہ میسجنگ ان میسجز سے مختلف ہوں گے جو آپ اپنی فیملی یا فرینڈز کوکرتے ہیں ، کئی ایسے کاروبار بھی ہوتے ہیں جنہیں اپنے پیغامات کیلئے ہوسٹنگ سروس کی ضرورت پڑتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ ہم یہ آپشن فراہم کررہے ہیں ، فیس بک کی ہوسٹنگ سروس استعمال کرسکتے ہیں جس سے صارفین کی بات چیت محفوظ رہے گی جس میں سوالات کے جوابات، متعلقہ معلومات اور رسیدیں وغیرہ بھی ہوسکتی ہیں ، لیکن جب آپ ایک بزنس کیساتھ فون ، ای میل یا واٹس ایپ سے رابطہ کریں گے تو یہ دیکھا جاسکے گا کہ آپ کیا کہہ رہے ہیں او ر یہ معلومات واٹس ایپ کی اپنی کمپنی کی مارکیٹنگ کے مقاصد کیلئے بھی استعمال ہوسکتی ہیں جس میں فیس بک پر مشہوری بھی شامل ہے ،آپ کو اطلاع کیلئے ہم ان پیغامات کو واضح نشانات لگاتے ہیں جو فیس بک کی ہوسٹنگ سروس استعمال کررہے ہیں ۔

کمپنی کا مزید کہنا تھاکہ آن لائن خریداری کرنیوالے لوگوں کی تعداد میں اضافہ ہورہاہے ، فیس بک کی مدد سے لوگ اپنی اشیاءدکھاتے اور بیچتے ہیں، اسی طرح اب کچھ لوگ اپنی مصنوعات واٹس ایپ پر بھی پیش کرسکیں گے تاکہ لوگ دیکھ کر خریدسکیں۔ اگر آپ دکاندار سے رابطہ کرتے ہیں توآپ کی یہ ساری کارروائی پرسنلائز کی جاسکتی ہے ، اس طرح کے فیچرز اختیاری ہیں اور اگر کوئی صارف ان فیچرز کو استعمال کرے گا تو اسے بتایاجائے گا کہ ان کا ڈیٹا کس طرح فیس بک کیساتھ شیئرکیاجائے گا۔

فیس بک پر اگر آپ کوئی اشتہار دیکھیں تو اس کیساتھ بھی ایک میسجنگ کا بٹن موجود ہوتاہے ،اسی طرح اگر آپ کے فون میں واٹس ایپ انسٹال ہے تو آپ کو اسی طرح کا ایک آپشن ملے گا کہ آپ کاروبار کرنیوالے متعلقہ شخص کو میسج کرسکتے ہیں، اس کے بعد فیس بک اپنے اشتہارات کو پرسنلائز کرنے کیلئے آپ کا وہ ڈیٹا استعمال کرسکتی ہے ۔

مزید :

ڈیلی بائیٹسسائنس اور ٹیکنالوجی

You may also like

Leave a Comment