Home » کورونا وائرس کے بعد پی ٹی سی ایل نے اپنے انٹرنیٹ صارفین کی ’توبہ توبہ‘ کرا دی

کورونا وائرس کے بعد پی ٹی سی ایل نے اپنے انٹرنیٹ صارفین کی ’توبہ توبہ‘ کرا دی

by ONENEWS


کورونا وائرس کے بعد پی ٹی سی ایل نے اپنے انٹرنیٹ صارفین کی ’توبہ، توبہ‘ کرا …

لاہور (کامران اکرم) چین سے پوری دنیا میں پھیلنے والے کورونا وائرس کے باعث پاکستان سمیت دنیا کے دنیا کے بیشتر ممالک میں لاک ڈاﺅن ہے اور گھروں میں محصور لوگ حصول تعلیم، تفریح اور معلومات کے حصول کیلئے انٹرنیٹ پر انحصار کر رہے ہیں مگر پی ٹی سی ایل کا انٹرنیٹ استعمال کرنے والے صارفین تو ایک الگ ہی طرح کے عذاب میں مبتلا ہیں۔ کورونا ریلیف اینڈ سپورٹ پیکیج کے نام پر 1.9 ارب روپے دینے کا دعویٰ کرنے والی کمپنی نے متاثرہ صارفین کو یکسر نظرانداز کر دیا جو شدید ذہنی کوفت سے دوچار ہیں۔

پاکستان میں لاک ڈاﺅن ہوتے ہی پی ٹی سی ایل کا انٹرنیٹ استعمال کرنے والے افراد کی جانب سے سست رفتار انٹرنیٹ اور سروس معطلی کی شکایات موصول ہونا شروع ہو گئیں اور افسوسناک بات یہ ہے کہ ان پر کوئی ایکشن لینے کے بجائے کمپنی نے صارفین کے ساتھ فراڈ شروع کر دیا ہے اور انٹرنیٹ سروس ٹھیک کئے بغیر ہی صارفین کی شکایات ختم کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے جس کے بارے میں سوشل میڈیا پر پی ٹی سی ایل کے آفیشل پیج کو ٹیگ کر کے کیا جا رہا ہے۔ مصری شاہ ایکسچینج کے ذمہ دار افسران احتیاطی تدابیر پر عمل کے باوجود صارفین سے ملنے اور ان کی شکایات سننے سے انکاری ہیں اور گیٹ پر کھڑے سیکیورٹی گارڈز انتہائی بدتمیزی کیساتھ پیش آنے میں مصروف ہیں۔

مصری شاہ ایکسچینج کا شمار پی ٹی سی ایل کی مصروف ترین ایکسچینج میں کیا جاتا ہے جہاں اس کے صارفین کی تعداد بہت زیادہ ہے لیکن ان سے موذی وباءکے دنوں میں بھی بل تو مکمل وصول کئے جا رہے ہیں مگر سروسز کے نام پر دھوکا دینے کا علاوہ کچھ نہیں کیا جا رہا۔ مصری شاہ ایکسچینج کے ملازمین اپنی ذمہ داریاں سے کنی کترانے میں مصروف ہیں جنہوں نے صارفین کے مسائل کو حل کرنے کے ہیلپ لائن کے ذریعے درج کرائی گئی شکایات خودبخود مکمل کرنے کی روش اختیار کر رکھی ہے جبکہ جس صارف کی جانب سے دباﺅ ڈالا جائے اسے ذاتی طور پر مسئلہ حل کرانے کی یقین دہانی کراتے ہوئے شکایت ختم کرنے کی درخواست کی جاتی ہے اور ایسا ہونے کے بعد صارف کا فون ہی نہیں سنا جاتا۔ اس سے بھی دلچسپ بات یہ ہے کہ جتنی مرتبہ ہیلپ لائن پر کال کرو، اتنی مرتبہ ایک نئے مسئلے کے بارے میں بتا دیا جاتا ہے کہ آپ کا انٹرنیٹ اس وجہ سے خراب ہے، جس سے سٹاف اور کمپنی کی ناصرف نااہلی ظاہر ہوتی ہے بلکہ یہ تاثر بھی ملتا ہے کہ کمپنی اپنے ورکرز کیساتھ مل کر صارفین کو دھوکہ دینے میں مصروف ہے اور ان کے خلاف تادیبی کارروائی کرنے کے بجائے نظرانداز کرنے کی روش اختیار کئے ہوئے ہے جبکہ فیلڈ ورکرز ذاتی عناد کے باعث صارفین کو مزید تنگ کرنے میں لگ جاتے ہیں اور بیک اینڈ سے انٹرنیٹ پیکیج کی پروفائل ہی تبدیل کر دیتے ہیں، یعنی اگر کسی نے 20 ایم بی پی ایل کا پیکیج لے رکھا ہے تو اس کے کنکشن پر 6 ایم بی پی ایس کی پروفائل الاٹ کر دی جاتی ہے اور دعویٰ یہ کیا جاتا ہے کہ آپ کا انٹرنیٹ بالکل ٹھیک چل رہا ہے۔

مذکورہ ایکسچینج کے علاقے میں پی ٹی سی ایل کے سٹاف کی ملی بھگت کے ساتھ لوگ کمپنی کا انٹرنیٹ لے کر 500 روپے سے 1000 روپے ماہانہ پر دیگر لوگوں کو بانٹنے میں مصروف ہیں جس سے ذاتی استعمال کی غرض سے سروسز حاصل کرنے والے صارفین شدید پریشانی کا شکار ہیں اور ایکسچینج سٹاف دیگر تمام صارفین کی نسبت ایسے لوگوں کی شکایات فوری اور ذاتی طور پر حل کرنے میں مصروف ہیں اور مبینہ طور پر ان سے کمیشن بھی وصول کرتے ہیں۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر اور فیس بک وغیرہ کو دیکھا جائے تو دیگر علاقوں میں بھی یہی صورتحال ہے جس کا اندازہ سوشل میڈیا کو دیکھ کر بخوبی لگایا جا سکتا ہے لیکن تکنیکی ڈیپارٹمنٹ سے آنے والے فون کالز پر بات کرنے والے نمائندے تمام تر ملبہ صارف پر گرا کر کہتے ہیں کہ کمپنی کی سروسز بالکل درست ہیں اور مسئلہ صارفین کی جانب سے ہے۔ پی ٹی سی ایل نے ہیلپ لائن 1218 پر درج کروائی جانے والی شکایات حل نہ ہونے کی صورت میں ایک ای میل ایڈریس Care@ptcl.net.pk بھی متعارف کرا رکھا ہے جس کے بارے میں دعویٰ کیا جاتا ہے کہ اس ای میل کے ذریعے رابطہ کرنے والے صارفین کا مسئلہ فوری حل کر دیا جاتا ہے مگر یہاں بھی فراڈ کے علاوہ کچھ نہیں کیا جا رہا ہے اور چند روز بعد جوابی ای میل میں مسئلہ ٹھیک ہونے کی جھوٹی خبر سنا دی جاتی ہے ۔ پی ٹی سی ایل سروسز کے ستائے صارفین کی جانب سے سوشل میڈیا پر کیا کچھ کہا جا رہا ہے، اس کا اندازہ ذیل میں دی گئی ٹویٹس سے بخوبی کیا جا سکتا ہے۔

ہارون الرشید نے لکھا ”کورونا وائرس اور زوم ایپلی کیشن کا بہت بہت شکریہ جس کی وجہ سے دنیا کو یہ جاننے کا موقع ملا کہ پی ٹی سی ایل ہمارے کیلئے کیسا دردسر ہے۔“

کوویڈ ۔19 اور زوم کی بدولت دنیا کو پتہ چل جائے گا کہ پچھواڑے میں کس قسم کا درد ہے # پی ٹی سی ایل ہے

– ہارون الرشید (@ پٹھواری) 4 مئی 2020

مصیب پیر بخش نامی صارف ڈاﺅن لوڈنگ سپیڈ کا سکرین شاٹ شیئر کرتے ہوئے طنز کیا کہ ”پی ٹی سی ایل کی شاندار سروس، بہت بہت شکریہ۔۔۔ ویسے میں آپ کو یہ بتاتا چلوں کہ میرا پیکیج 6 ایم بی پی ایس ہے ۔۔۔ لیکن کیا کروں میں پی ٹی سی ایل استعمال کرنا جاری رکھوں گا کیونکہ میرے پاس کوئی دوسرا آپشن موجود ہی نہیں ہے۔“

بذریعہ لاجواب سروس ٹویٹ ایمبیڈ کریں آپ کا شکریہ

ویسے میرے بلنگ کنکشن کی رفتار 6mbps ہے ..

ٹھیک ہے میں آگے چلوں گا # پی ٹی سی ایل چونکہ میرے پاس کوئی دوسرا آپشن نہیں ہے۔ pic.twitter.com/EHVwQgAFIk

– موسیب پیر بخش (@ موسیب_پیئر) 3 مئی 2020

شفقت نامی صارف نے لکھا ”انتہائی معذرت کیساتھ پی ٹی سی ایل انتہائی فضول نیٹ ورک بن گیا ہے اور یہ صرف پیسے بٹورنے کیلئے بنا ہے۔“

انتہائی معذرت کے ساتھ ۔۔# پی ٹی سی ایل انتہائی فضول نیٹ ورک بن گیا ہے۔۔ صرف پیسے بٹھورنے کیلئے بنا ہے pic.twitter.com/Qxuz8KKqzj

– Sh @ fq @ t M @ rw @ t (@ Shafqatmarwat1) 3 مئی 2020

عبدالمعید نے تو یہ انکشاف کیا کہ شکایت درج کروانے پر پی ٹی سی ایل کا ایک افسر ان کے گھر آ گیا اور آئندہ شکایت درج نہ کروانے کا کہا، انہوں نے لکھا ”آج میری آن لائن کلاس تھی اور میرا نیٹ ماشاءاللہ سے پی ٹی سی ایل کا تھا اور وہی ہوا تھا جس کا ڈر تھا۔ ڈس کنکشن کی وجہ سے کلاس مس ہو گئی۔ کیا کہوں میں اب ان کو۔ شکایت درج کرائی تو پی ٹی سی ایل کا ایک افسر میرے گھر تک آ گیا اور کہنے لگا شکایت مت کرنا آئندہ کے بعد۔۔۔“

میری میری آن لائن کلاس تھی اور میرا نیٹ ورک ماشاء اللہ سی ٹویٹ ایمبیڈ کریں تھا اور واہی ہونا تھا جسکا درہ تھا۔ منقطع کلاس مس ہو گی۔ کیا کہان اب مین انکو۔ کی شکایت کریں ٹویٹ ایمبیڈ کریں کا ایک افسر صرف گھر تک آ گیا ہے اور کہیں گے شکایت چٹائی کرنا آئیندہ خراب ہے ؟؟؟؟ #ptcl

– عبد موئید (@ ساخت لونڈا 69) 3 مئی 2020

شفقت مروت نے لکھا ”تقریباً 2002ءسے پی ٹی سی ایل کا انٹرنیٹ استعمال کر رہے ہیں لیکن اب ان کی غیر ذمہ دارانہ نیٹ ورک جو آئے روز خراب ہوتا ہے اور اسے ٹھیک کرنے کیلئے ان کے پاس کوئی ٹیم بھی نہیں ہے۔ لہٰذا عید کے بعد پی ٹی سی ایل کو اللہ حافظ، اس سے بہتر ہے کہ میں کسی اور کمپنی کا انٹرنیٹ استعمال کر لوں۔“

ٹویٹ ایمبیڈ کریں

تقریباً 2002 سے # پی ٹی سی ایل کا انٹرنیٹ استعمال کررہے ہیں ، لیکن اب ان کی غیرذمہ دارانہ نیٹ ورک جو روز آئے دن خراب ہوتا ہے اور ٹیھک کرنے والا کوئی ٹیم نہیں ہے اسکے پاس،

لہذا عید کے بعد #PTCl کو اللہ حافظ، اس سے بہتر ہے کہ ٹویٹ ایمبیڈ کریں ٹویٹ ایمبیڈ کریں @ یوفون والی USB لی جائے

– Sh @ fq @ t M @ rw @ t (@ Shafqatmarwat1) 3 مئی 2020

طلحہ خالد نے لکھا ”جس دن میرے علاقے میں سٹروم فائبر آ گیا اس دن ہی میں پی ٹی سی ایل کے انٹرنیٹ سے چھٹکارا حاصل کر لوں گا۔“

دن ٹویٹ ایمبیڈ کریں جس دن میں اپنے عہدے سے سبکدوشی کروں گا اس دن میرے علاقے پہنچیں گے ٹویٹ ایمبیڈ کریں

قابل رحم خدمت# پی ٹی سی ایل

– طلحہ خالد (@ آئام ٹالھاخالد) 2 مئی 2020

عبدالعلیم باجوہ نے شاعرانہ انداز میں اپنا درد بیان کرتے ہوئے لکھا ”پی ٹی سی ایل تیری سپیڈ کی انتہاءچاہتا ہوں۔۔۔ میری سادگی دیکھ کیا چاہتا ہوں۔“

ٹویٹ ایمبیڈ کریں تیری سپیڈ کی انتہا چاہتا ہوں

میری سادگی دیکھ کیا چاہتا ہوں# پی ٹی سی ایل # انٹرنٹ فریڈم

– عبدولیلئمجوا یکم مئی 2020

ماسٹر نامی صارف نے لکھا ”میرا سوال یہ ہے کہ میری دکان گزشتہ دو مہینوں سے بند ہے اور وہاں لگا پی ٹی سی ایل کا انٹرنیٹ بالکل بھی استعمال نہیں ہوا لیکن اس کے باوجود میں بل ادا کرنے کیلئے کیسے اہل ہو سکتا ہوں؟ پی ٹی سی ایل والے مجھے ای میل کے ذریعے اور گھر بل بھجوا کر بھی کیوں مجھے کہہ رہے ہیں کہ میں اسے ادا کروں؟“

ٹویٹ ایمبیڈ کریں میرا سوال یہ ہے کہ میں اپنی دکان کا براڈ بینڈ بل کس طرح ادا کرنے کے اہل ہوں جو میں دو ماہ سے لاک ڈاؤن کی وجہ سے استعمال نہیں کر رہا ہوں #ptcl انہوں نے مجھے بل اور ای میل کیوں بھیجا اور یہ ادائیگی کرنے کے لئے کیوں کہا؟ٹویٹ ایمبیڈ کریں ہمیں ریلیف دینا ہوگا ٹویٹ ایمبیڈ کریں

– ɐɯɹǝʇɐɯɐɯٹر (ɐɯyɐɯɐɯ @ @ 30 اپریل ، 2020

مصطفی رشید نے بھی طنزیہ انداز میں دلچسپ تبصرہ کیا کہ ”آج کل پی ٹی سی ایل کے انٹرنیٹ کی شکایت کیلئے ہیلپ لائن پر فون کرو تو نمائندہ کہتا ہے کہ ٹھہرئیے میں چیک کرتا ہوں اور کچھ دیر بعد کہتا ہے معاف کیجئے گا میں چیک نہیں کر سکتا جب وجہ پوچھو تو جواب ملتا ہے کہ میرا انٹرنیٹ بھی نہیں چل رہا۔“

آج کل پی ٹی سی ایل

ہیلو سر نیٹ این ایچ ایل ایل ایل آر اے

پی ٹی سی ایل: مجھے چیک کرنے دو

میں: انتظار کر رہا ہوں

پی ٹی سی ایل: معذرت ہم چیک نہیں کر سکتے ہیں

میں: کیوں؟

پی ٹی سی ایل: جانی میرا بی این ایچ ایل Chha. #ptcl # پی ٹی سی ایل # پاکستان

– مستفا رشید (@ مسطفیٰ رشید) 28 اپریل ، 2020

کامران اکرم نامی صارف نے لکھا ”پی ٹی سی ایل کا نیٹ ورک بدترین ہے اور صارفین کیلئے کورونا وائرس سے بھی زیادہ تکلیف دہ بن چکا ہے۔ میں اپنے انٹرنیٹ کے حوالے سے مارچ کے مہینے سے شکایات درج کروا رہا ہوں لیکن ابھی تک مسئلہ حل نہیں کیا گیا۔ 20 ایم بی پی ایس کے پیکیج پر ایک ایم بی پی ایس سپیڈ مل رہی ہے جس کا سکرین شاٹ ذیل میں دیا گیا ہے۔ مصری شاہ ایکسچینج کا سٹاف کسی بھی چیز سے زیادہ بدترین ہے۔“

ٹویٹ ایمبیڈ کریں کیا شٹ نیٹ ورک ہے اور وہ کورونا وائرس سے زیادہ تکلیف دہ ہو گیا ہے … اس کے بارے میں مارچ سے شکایت کرتے ہوئے اور اب بھی کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے … نیچے 20 ایم بی پی ایس پیکیج کا تازہ ترین اسپیڈ ٹسٹ نتیجہ ہے … ٹویٹ ایمبیڈ کریں مصری شاہ تبادلہ کسی بھی چیز سے بدتر ہے pic.twitter.com/FaTkM4pUUm

– کامران اکرم (@ kamiii168) 4 مئی 2020

مزید :

ڈیلی بائیٹسسائنس اور ٹیکنالوجیکورونا وائرس





Source link

You may also like

Leave a Comment