Home » کشميريوں کی جدوجہدکا اختتام آزادی ہے،عمران خان

کشميريوں کی جدوجہدکا اختتام آزادی ہے،عمران خان

by ONENEWS

سیدعلی گیلانی کو نشان پاکستان دینے کا اعلان

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کشميريوں کو اللہ ايسے دور سے گزار رہا ہے جس کا اختتام آزادی ہے۔

بدھ کو یوم استحصال کےموقع پروزیراعظم  نے آزاد کشمیر قانون سازاسمبلی سے کرتے ہوئے کہا کہ نریندر مودی نےہندو کارڈ کھيل کراليکشن جيتا انسانوں کےخلاف نفرتيں پيدا کرنے والے اس شخص کی اصلیت اب سامنے آچکی ہے۔ اس موقع پر وزیراعظم نے حریت رہنما سیدعلی گیلانی کو14 اگست 2020 کو نشان پاکستان دینے کا اعلان بھی کیا۔

اپنے خطاب نیں عمران خان نے کہا کہ جو قوم اصولوں پر چلتی ہے وہ ترقی کرتی ہے لیکن جب وہ اصولوں سے ہٹتی ہے پستیاں اس کا مقدر ہوتی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ سن 60 کی دہائی ميں دنيا پاکستان کی مثال دیا کرتی تھی لیکن پھر پاکستان کا گراف آہستہ آہستہ نيچے آناشروع ہوگيا تاہم جو صلاحیت پاکستانیوں میں ہے وہ کسی اور قوم میں نہیں لہٰذا قوم کو مايوس نہيں ہونا چاہيے۔

وزیراعظم نے کہا کہ طاقت ور قومیں تکبر کی وجہ سے فیصلے کرکے تباہ ہوئی ہیں،بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کی متکبرانہ سوچ اس کی تباہی کاباعث بنےگی۔ انھوں نے یہ بھی بتایا کہ دنياکی بڑی طاقتوں سے خود کشميرپربات کی کیوں کہ کئی رہنماؤں کوکشميرکےمسئلےکی سمجھ نہيں تھی۔

عمران خان نے کہا کہ پاکستان ہر فورم پر مسئلہ کشمیر کو اٹھاتا رہے گا اور اس کی پوری منصوبہ بندی کررہے ہیں۔عمران خان نے واضح کردیا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت حل ہونا چاہئے،کشمیر کا بھارتی تسلط غیر قانونی ہے۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ کشمیریوں کو استصوابےرائےکا حق نہیں دیا گیا۔ وزیراعظم نے سید علی گیلانی کو 14 اگست 2020 کو نشان پاکستان دینے کا اعلان بھی کیا۔

اجلاس میں مذمتی قرار داد بھی متفقہ طور پر منظورکی گئی۔قراردادمیں کہا گیا کہ آزادکشمير قانون ساز اسمبلی کااجلاس بھارتی اقدامات کی مذمت کرتاہے،مقبوضہ کشميرميں محاصرےکی شديدمذمت کرتےہيں۔ قرارداد میں کہا گیا کہ اجلاس بھارتی کالےقوانين کی مذمت کرتاہے۔

وزیراعظم آزاد کشمیر نےکہا کہ سياسی قيادت کےايل او سی کےدورےسےمحصورکشميريوں کی حوصلہ افزائی ہوئی ہے۔ انھوں نے کہا کہ نریندر مودی سب کیلئےخطرہ ہے،اس کےعزائم سامنے آگئےہیں۔فاروق حیدر نے کہا کہ مقبوضہ کشميرکےبہن بھائيوں کےساتھ کھڑےہيں۔ انھوں نے مزید کہا کہ آزادی کی جدوجہدميں کشميريوں کےساتھ کھڑے ہيں۔

اس سےقبل اسپیکرآزاد کشمیراسمبلی کا اپنے خطاب میں کہنا تھا کہ ہرمشکل وقت ميں کشميرکاساتھ ديا، 5اگست کےبھارتی اقدام کی پوری دنیانےمذمت کی۔

آزاد کشمیراسمبلی کےرکن حسن ابراہیم نےکہا کہ 5اگست سياہ دن ہے،نریندرمودی کی حکومت نےغيرقانونی اقدامات کيے۔ انھوں نے کہا کہ ہم آج بھی پاکستان کےساتھ رہنےکی جدوجہدمیں شامل ہیں، 1949کی قراردادوں کی بنیادپراپناحق خودارادیت چاہتےہیں، کشمیری اس مسئلےکےبنیادی فریق ہیں، کشميری عوام سےان کاحق خوداردايت کوئی نہيں چھين سکتا۔

رکن اسمبلی عبدالرشیدترابی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نےموثرطریقےسےپوری دنیا میں مسئلہ کشمیراجاگرکیا،نریندر مودی کی پالیسیوں کی شکل میں ہندوستان ٹوٹ پھوٹ کا شکارہے، ریاست جموں وکشمیرپاکستان اورہندوستان کےدرمیان زمین کاجھگڑانہیں، کشمیراورپاکستان ایک قوم اورایک ملت ہے۔

سردارعتیق نےاپنے خطاب میں کہا کہ ہندوستان کشميرکی سرزمين پرکبھی اپنےمنصوبوں ميں کامياب نہيں ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ قائداعظم نےکشميرکوپاکستان کی شہ رگ قرار ديا۔ بیرسٹر سلطان محمود نے کہا کہ وزيراعظم عمران خان نےکشميرکےسفيرکاحق ادا کيا، عمران خان نےہرفورم پرکہاکہ وہ کشميری عوام کےمطابق مسئلےکاحل چاہتےہيں، حکومت پاکستان کی کوششوں ميں کمی نہيں آئی ہے، بھارت رياستی دہشتگردی کامرتکب ہورہاہے۔

You may also like

Leave a Comment