Home » کروناوائرس: مسلمانوں کامیتیں جلانےپر احتجاج

کروناوائرس: مسلمانوں کامیتیں جلانےپر احتجاج

by ONENEWS

فوٹو: الجزیرہ

سری لنکا میں کرونا وائرس سے جاں بحق ہونے والے مسلمانوں کو اہل خانہ کی مرضی اور اسلامی روایات کے برخلاف جلانے پر مسلم برادری شدید احجاج کیا ہے۔

سری لنکا میں کرونا وائرس کی وجہ سے انتقال کر جانے والے افرادکی میتیں اہل خانہ کو لوٹانے کی بجائے محکمہ صحت کے حکام 19 سے زائد مسلمانوں کی لاشیں جلا دی تھیں جبکہ مسلم روایات کے تحت مُردوں کو جلانے کے بجائے دفنانے جاتا ہے۔

آئی لینڈ کے بااثر بت بکھشوؤں کی جانب سے کرونا وائرس کے تمام مردوں کو جلانے کی مہم چلائی تھی اور کہا گیا تھا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے انتقال کر جانے والے افراد کو اگر دفن کیا گیا، تو اس سے زیر زمین پانی آلودہ ہو جائے گا اور وائرس پھیل سکتا ہے۔

یاد رہے کہ سری لنکا میں رواں برس اپریل میں مُردوں کو جلانے کے ضوابط لاگو کیے گئے تھے۔

دوسری جانب مسلمان میتیں جلائے جانے پر احتجاج فقط سری لنکا ہی میں نہیں بلکہ دیگر مسلم ممالک میں بھی دیکھا جا رہا ہے۔ سری لنکا کے ہم سایہ ملک مالدیپ نے سری لنکا میں کورونا وائرس کی وجہ سے انتقال کر جانے والے مسلمانوں کو اپنے ہاں دفنانے کی پیش کش کی ہے۔

اس سے قبل سری لنکا کے اٹارنی جنرل نے گزشتہ ہفتے 19مسلمانوں کی لاشیں بھٹی میں ڈال کر خاکستر کرنے کا احکامات جاری کیے تھے۔ ان میں شیخ نامی اس بچے کی لاش بھی شامل تھی جو اپنی پیدائش کے فقط 20روز بعد انتقال کرگیا تھا۔ اس بچے کی لاش کو اس کے والدین کی مرضی کے خلاف جلا دیا گیا۔

اہل خانہ کے مطابق پہلے اس بچے کی تدفین کی بجائے اسے جلانے کے لیے ان پر زبردست دباؤ ڈالا گیا تاہم جب انہوں نے ماننے سے انکار کیا، تو کسی بھی رشتہ کی موجودگی کے بغیر ہی بچے کی لاش جلا دی گئی۔

انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی مسلمانوں کو تدفین کا حق نہ دینے پرسری لنکا پر تنقید کی ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل کی ویب سائٹ پر جاری کردہ بیان میں ایمسنٹی انٹرنیشنل کے ڈائریکٹر برائے جنوبی ایشیا بیراج پٹنیک نے کہا ہے کہ اس مشکل وقت میں حکام مختلف برداریوں میں مزید خلیج پیدا کرنے کی بجائے ان کو ایک دوسرے کے قریب لائیں۔

ایمنسٹی نے کولمبو حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ مذہبی اقلیتوں کو اپنی مذہبی اقدار کے مطابق آخری رسومات کی اجازت دے۔

واضح رہے کہ الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق سری لنکا میں کرونا وائرس کے کیسز میں اضافہ ہوا ہے جبکہ انفیکشن کی تعداد 8گنا سے زیادہ بڑھ چکی ہے۔ ملک میں اب تک 29 ہزار 300سے زیادہ کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور 142افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

You may also like

Leave a Comment