Home » عارف علوی،عمران اسماعیل،علی زیدی نے امن کمیٹی سے مذاکرات کیے،سعید غنی

عارف علوی،عمران اسماعیل،علی زیدی نے امن کمیٹی سے مذاکرات کیے،سعید غنی

by ONENEWS

پی ٹی آئی کے امن کمیٹی سے روابط تھے

پی پی رہنما سعید غنی کا کہنا ہے کہ مجھے نیب پر اعتماد نہیں کہ وہ پی ٹی آئی کے خلاف کوئی کارروائی کرے گی، پی ٹی آئی نے ملکی معیشت کا جنازہ نکال دیا ہے۔ اس موقع پر انہوں نے علی زیدی کو آڑے ہاتھوں لے لیا۔

ناصر حسین شاہ

کراچی میں دھواں دھار پریس کانفرنس کرتے ہوئے ناصر حسین اور سعید غنی نے پی ٹی آئی رہنماؤں کو آڑے ہاتھوں لے لیا۔ گفتگو کے آغاز میں ناصر حسین شاہ نے کہا کہ حلیم عادل شیخ نیب کے ریڈار پر آگئے ہیں۔ جنہوں نے اعتراف کیا، نیب پہلے ان کے کیسز دیکھے۔ کمیشن کی رپورٹ پر بھی کوئی ایکشن نہیں کیا گیا۔ اجمل وزیر کو بے ضبطیگیوں پر ہٹایا گیا، وفاقی حکومت نہ اہل ہے۔

سعید غنی

اس موقع پر سعید غنی کا کہنا تھا کہ مجھ پر لوگوں کا فرض کا ان کے حق کی بات کروں گا، فہمید مرزا نے میرے بیان پر اعتراض کیا، مگر میرا بیان قوانین کے عین مطابق تھا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے قومی احتساب بیورو پر اعتماد نہیں کہ وہ پی ٹی آئی کے خلاف کوئی کارروائی کریں گے، یہ ایکشن اس لیے لیا گیا ہے کہ حلیم عادل شیخ کو کلین چٹ دی جائے، انگنت نام ایسے ہیں جس پر انگلیاں اٹھی ہیں مگر نیب نے کوئی کارروائی نہیں کی۔ خسرو بختیار ایک واضح مثال ہے۔

انہوں نے کہا کہ دیکھتے ہیں کہ شاید نیب اپنے ساکھ بحال کرنے کیلئے کچھ کرے، اس وقت اس ملک کی معیشت کا حال بری ہے، پیٹرول، پی آئی اے، گیس اور دیگر چیزوں کی صورت حال عوام کے سامنے ہے۔ افغان کرنسی پاکستانی روپے کے مقابلے میں مہنگی ہوگئی ہے۔ اس جماعت نے ملکی معیشت کا جنازہ نکال دیا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے علی زیدی کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ میں علی زیدی کو چول نہیں ماہا چول کہتا ہوں، وہ چولوں کے سردار ہیں، پہلے جے آئی ٹی اور اس کے بعد انہوں نے ایک اور مذاق کیا کہ میں ایک تہلکہ خیز ویڈیو لے کر آرہا ہوں، جس پر پورا ملک اور میڈیا حیران ہوگیا اور پھر جو انہوں نے ریلیز کیا وہ سب آپ کے سامنے ہے۔

پی ٹی آئی اور امن کمیٹی کے روابط

سعید غنی نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی کا امن کمیٹی سے رابطہ تھا۔ صدر عارف علوی، گورنر سندھ عمران اسماعیل اور علی زیدی نے 3 رکنی کمیٹی بنائی۔ اس کمیٹی کو ٹاسک دیا کہ امن کمیٹی سے رابطہ کرکے پی ٹی آئی میں شامل کرنے کیلئے راضی کریں۔ پی ٹی آئی کے کراچی سی ویو دھرنے میں امن کمیٹی کے لوگ شریک ہوتے رہے۔ ان کی ملاقاتیں ہوتی رہیں۔ انہوں نے 3 رکنی کمیٹی بنائی کے امن کمیٹی کے لوگوں کو تحریک انصاف میں شامل کرنا چاہتی تھی۔ حبیب جان نے بھی بتایا کہ پی ٹی آئی کے کراچی میں جلسے امن کمیٹی کی وجہ سے کامیاب ہوئے۔ ذوالفقار مرزا تو حر ہیں، وہ اپنے تمام اقدامات خود مان رہا ہے مگر علی زیدی نہیں مان رہے ہیں، پی ٹی آئی کے لوگوں کو نہ کوئی احساس نہ پتا کہ وہ کیا باتیں کر رہے ہیں نہ وہ اپنی غلطیاں تسلیم کرتے ہیں۔

سعید غنی نے یہ بھی کہا کہ حبیب جان اور عمران خان کی 2011 میں فون پر بات ہوئی۔ حکومت پہلے نہ اہلی سے بحران پیدا کرتی ہے پھر دوبارہ نا اہلی سے کریڈیٹ لیتی ہے۔

You may also like

Leave a Comment