Home » بھارتی معیشت کو 15 ہزار کروڑ روپے کا نقصان مودی سرکار ہل کر رہ گئی

بھارتی معیشت کو 15 ہزار کروڑ روپے کا نقصان مودی سرکار ہل کر رہ گئی

by ONENEWS


بھارتی معیشت کو 15 ہزار کروڑ روپے کا نقصان، مودی سرکار ہل کر رہ گئی

سرینگر (ڈیلی پاکستان آن لائن)مقبوضہ کشمیر میں لوگوں نے بھارتی قبضے اور جاری محاصرے کے خلاف اپنے غم و غصے کے اظہار کیلئے جمعہ کو مختلف علاقوں میں زبردست مظاہرے کیے۔

کشمیر میڈیاسروس کے مطابق سرینگر،بڈگام،گاندر بل،اسلام آباد،پلوامہ،کولگام،شوپیاں،بانڈی پورہ،بارہمولہ،کپواڑہ اوردیگر علاقوں میں لوگ نما ز جمعہ کےفوراً بعد سڑکوں پر نکل آئے اور آزادی کے حق میں جبکہ بھارت کے خلاف فلک شگاف نعرے لگائے۔ بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں نے مختلف مقامات پر مظاہرین پر طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا جس کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہو گئے۔ قابض انتظامیہ نے پانچ اگست سے 6 دسمبر تک مسلسل18ویں ہفتے بھی لوگوں کو سرینگر کی تاریخی جامع مسجد اور وادی کشمیر کی دیگر بڑی مساجد میں نماز جمعہ ادا نہیں کرنے دی۔دریں اثنا جمعہ کو124ویں روز بھی جاری رہنے والے بھارتی محاصرے کی وجہ سے مقبوضہ علاقے خاص طو ر پر وادی کشمیر میں صورتحال ابتر رہی۔ مقبوضہ علاقے میں دفعہ 144کے تحت پابندیوں کے نفاذ اور انٹرنیٹ اورپری پیڈ موبائل فون کی معطلی کے باعث وادی کے لوگ بدستور مشکلات کا شکار ہیں۔

کشمیر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریزکے صدر شیخ عاشق حسین نے سرینگر میں ایک انٹریومیں کہاکہ بھارت کی طرف سے رواں برس پانچ اگست سے مسلط کر دہ فوجی محاصرے اور انٹرنیٹ کی بندش کے سبب مقبوضہ علاقے کی معیشت کو اب تک 15ہزار کروڑروپے کا نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے کہا کہ محاصرے اور انٹرنیٹ پر پابندی کے بعد تجارت کا ہرشعبہ متاثر ہوا ہے۔ جموں وکشمیر یوتھ لیگ نے مقبوضہ علاقے میں دیواروں پر چسپاں پوسٹروں کے ذریعے احتجاجی کلینڈر جاری کرتے ہوئے لوگوں پر زور دیا ہے کہ وہ کل سرینگر میں دستگیر صاحب کی طرف مارچ کریں۔ پوسٹروں میں لوگوں سے کہا گیا کہ وہ پیر کے روز بھی سرینگر کے علاقے سونہ وار میں قائم اقوام متحدہ کے دفتر کی طرف اسی طرح کا مارچ کریں جبکہ بدھ کی شام کو تمام روشیاں بجھا دیں اور جمعرات کو سول کرفیونافذ کریں۔

ہائیکورٹ بارایسوسی ایشن کے سابق جنرل سیکرٹری غلام نبی شاہین نے کے ایم ایس کے ساتھ ایک انٹرویو میں بار کے صدر میاں عبدالقیوم اور سینئر وکلا نذیر احمد رونگا، محمد اشرف بٹ اور ہلال احمد لون سمیت غیر قانونی طورپر نظر بند تمام کشمیریوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔ برطانوی آن لائن اخبار ”دی انڈیپنڈنٹ“ کے اسلام آباد سے جاری ہونے والے اردو ایڈیشن ”انڈیپنڈنٹ اردو“ نے اپنے ایک مضمون میں انکشاف کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوجیوں کی طرف سے خواتین کی آبروریزی کے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے اورآبروریزی کے واقعات کی اصل تعداد منظر عام پر آنے والے واقعات کی تعداد سے کہیں زیادہ ہے۔ مضمون میں لکھا ہے کہ بھارتی فوج کشمیریوں کے حوصلوں کو توڑنے کیلئے خواتین کی آبروریزی کو ایک جنگی ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔ مضمون میں مقبوضہ کشمیر کے ایک صحافی کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ بھارتی فوجی دن یا رات کے کسی بھی وقت گھروں میں داخل ہو کر خواتین خاص طور پر نوجوان لڑکیوں کے بارے میں دریافت کرتے ہیں۔جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے قائمقام چیئرمین عبدالحمید بٹ نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس کے نام اپنی ایک یادداشت میں کہا ہے کہ وہ پارٹی چیئرمین محمد یاسین ملک جن کی زندگی کو نئی دلی کی تہاڑ جیل میں سخت خطرہ لاحق ہے کی سلامتی اور لائن آف کنٹرول پر جاری پاک بھارت کشیدگی کم کرنے کے لیے اقدامات کریں۔ یہ یادداشت لبریشن فرنٹ کے رہنماؤں حافظ محمد انور سماوی، محمد رفیق ڈار، سلیم ہارون، سردار جمشید اور وحید شوکت نے اسلام آباد میں قائم اقوام متحدہ کے دفتر میں پیش کی۔

مزید :

قومیعلاقائیآزادکشمیرمظفرآباد





Source link

You may also like

Leave a Comment