Home » افغانستان کی لڑکیوں کا ایسا کارنامہ کہ ہر کوئی داد دے گا

افغانستان کی لڑکیوں کا ایسا کارنامہ کہ ہر کوئی داد دے گا

by ONENEWS


افغانستان کی لڑکیوں کا ایسا کارنامہ کہ ہر کوئی داد دے گا

کابل(ڈیلی پاکستان آن لائن)دنیا بھرمیں کورونا وائرس نے جنگی حالت کا سماں پیدا کردیا ہے، ہر ملک اپنے اپنے وسائل کے مطابق اس موذی مرض سے مقابلہ کرنے میں مصروف ہے، اس صورتحال میں ان ممالک کو زیادہ مشکلات پیش آرہی ہیں جہاں نظام صحت ترقی یافتہ ممالک کی نسبت کمزورہے۔

ایسے ہی ممالک میں افغانستان بھی شامل ہے جہا ں وینٹی لیٹرز کی کمی کی وجہ سے کئی جانیں داو پر لگی ہوئی ہیں۔ اس کمی کو دور کرنے کیلئے ا

افغان لڑکیوں کی روبوٹکس ٹیم میدان میں آگئی ہے اور وہ گاڑیوں کے پرزوں سے وینٹی لیٹر بنانے لگی ہے۔

افغانستان کی یہ روبوٹکس ٹیم بین الاقوامی مقابلوں میں بھی حصہ لے چکی ہے۔ اس ٹیم نے 2019میں روبوٹک اولمپکس میں حصہ لے کر افغانستان کی نمائندگی کی تھی۔

امریکی نشریاتی ادارے وائس آف امریکہ سے گفتگو کرتے ہوئے روبٹکس ٹیم کی کپتان سمیہ فاروقی نے کہا “جیسے جیسے کیسز بڑھ رہے ہیں، ہم دوسرے ممالک کی مدد کا انتظار نہیں کرسکتے۔ ہمیں خود سے کچھ کرنا ہوگا۔ تاکہ افغانستان میں وینٹی لیٹرز کی کمی نہ ہو۔”

ایک اور کھلاڑی ڈیانا وہاب نے کہا کہ “وینٹی لیٹرز کی ضرورت صرف افغانستان میں نہیں ہے بلکہ یہ دنیا بھرکی ضرورت بن چکے ہیں۔ ہم حکومت اور وزارت صحت کی مدد کرنا چاہتے ہیں۔اس لیے ہم نے یہ کام شروع کیا”۔

رپورٹ کے مطابق یہ باصلاحیت لڑکیاں گاڑیوں کے پرانے پرزوں کی مدد سے وینٹی لیٹرز تیارکررہی ہیں ، افغان صوبہ ہرات کا محکمہ صحت جلد ان وینٹی لیٹرز کی کلینیکل ٹیسٹنگ کرے گا۔

ترجمان وزارت صحت حمیدمایار کا کہنا ہےکہ ان وینٹی لیٹرز کو پہلے جانوروں پر ٹیسٹ کیاجائے گا اور مثبت نتائج آنے پر اسے انسانوں پر استعمال کیا جاسکتا ہے۔

اس حوالے سے روبوٹک ٹیم کی خواہش ہے کہ حکومت ان کی مدد کرے،ٹیم کی چیف ایگزیکٹو آفیسر رویا محبوب کا کہناہے کہ اس حوالے سے ڈاکٹرز کو بہتر معلوم ہوگا، انہیں علم ہوگا کہ اسے کیسے بہتر بنایا جاسکتا ہے۔اس کے بعد اسے ٹیسٹ کرنا ہے اورہوسکتا ہے کہ یہ جون میں تک تیارہوجائیں اور ہم انہیں ہسپتالوں اور کلینکس کو دے سکیں۔

خیال رہے کہ افغانستان میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد8ہزار500سے زائد ہے۔ملک بھر میں وائرس سے 200سے زائد افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

ٹیم چاہتی ہے کہ ان کے وینٹی لیٹرز قیمتی جانیں بچائیں۔

مزید :

بین الاقوامیسائنس اور ٹیکنالوجیکورونا وائرس





Source link

You may also like

Leave a Comment