Home » اسکول بند رکھنے ہیں یا کھولنے ہیں؟ فیصلہ آج ہوگا

اسکول بند رکھنے ہیں یا کھولنے ہیں؟ فیصلہ آج ہوگا

by ONENEWS

فائل فوٹو

تعليمی ادارے بند ہوں گے يا کھلے رہيں گے۔ وفاقی اور صوبائی وزرائے تعلیم کا اہم اجلاس آج 23 نومبر بروز پیر طلب کرلیا گیا ہے۔ تمام صوبائی وزراء اور وفاقی وزير تعليم ويڈيو لنک کے ذريعے اجلاس میں شرکت کريں گے۔

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے اپنی ٹويٹ میں لکھا کہ دن 12 بجے نيوز کانفرنس کرکے عوام کو فيصلوں سے متعلق آگاہ کريں گے۔ کرونا کی دوسری لہر سے کيسز ميں اضافہ ہونے پر حکومت کی تشويش بھی بڑھ گئی ہے۔

وزير صحت پنجاب کا کہنا ہے کہ تعليمی اداروں ميں چھٹياں ہونی چاہئيں، جب کہ طبی ماہرين بھی ياسمين راشد کے مؤقف سے اتفاق کرتے ہيں۔ ان کا کہنا ہے اسکول کھلے رہنے سے بچے ہی نہيں ان کے گھر والے بھی خطرے ميں ہيں۔ وبا پھیل رہی ہے، بچوں کو چھٹياں دينا ہوں گی۔

واضح رہے کہ اس سے قبل وزارت تعلیم کا اجلاس 16 نومبر کو ہوا تھا، جس میں تعلیمی اداروں سے متعلق تجاویز صوبوں کو بھیجی گئی تھیں۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ 21 نومبر کو ہونے والے محکمہ تعلیم سندھ کے اجلاس میں صوبے بھر میں موسم سرما کی تعطیلات نہ دینے کی تجویز پر اتفاق کیا گیا تھا۔

شرکا کا کہنا تھا کہ سندھ میں اسکول اور کالجز بند نہیں ہونے چاہیئں۔ اسکول اور کالجز میں ایس او پیز کو مزید سخت کیا جائے گا، تاہم جو اسکول آن لائن تعلیم دینا چاہیں، وہ دے سکتے ہیں۔

وزیر تعلیم پنجاب

وزیر تعلیم پنجاب مراد راس کا کہنا ہے کہ ہم نے وہ فیصلہ لینا ہے جو طلبہ اور اساتذہ کیلئے بہتر ہو۔ سب سے زیادہ ایس او پیز پر اسکولوں میں عمل ہو رہا ہے۔ اگربچے اسکول نہیں جا رہے تو یہ نہ ہو کہ بچوں کو شاپنگ مال، تفریحی مقامات یا مری وغیرہ لے جائیں۔ یہ چھٹیاں نہیں، جو آن لائن پڑھائی کرسکتے ہیں وہ کرینگے۔ سردیوں کی چھٹیاں اب دینی ہیں تو گرمیوں کی چھٹیاں کم کرنا پڑیںگی۔

خیبرپختونخوا

دوسری جانب وزیر صحت خیبر پختونخوا تیمور جھگڑا کا کہنا ہے کہ خیبر پختونخوا میں تعلیمی اداروں سے متعلق فیصلہ 23 نومبر سے 2 دن پہلے اور بعد میں بھی ہوسکتا ہے۔ صوبہ بھر میں کرونا کیسز میں اضافہ ہو رہا ہے تاہم ہماری کوشش ہے کہ کرونا کو پھیلنے سے روکا جائے۔

بلوچستان

قبل ازیں وزیر تعلیم بلوچستان سردار یار محمد رند کا کہنا تھا کہ تعلیمی اداروں میں موسم سرما کی تعطیلات یکم دسمبر سے ہوں گی اور نیا تعلیمی سال 3 ماہ کی تعطیلات کے بعد مارچ میں شروع کیا جائے گا۔

پنجاب میں شادی ہالز بند

 پنجاب حکومت کی جانب سے 20 نومبر بروز جمعہ شادی ہالز ميں تقریبات پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔  کھلی جگہ پر تقریبات میں ایس او پیز پر عمل درآمد لازمی ہوگا۔ نئی احکامات کے مطابق تقریبات میں 300 افراد کو شرکت کی اجازت ہوگی۔ شادی اور دیگر تقریبات کی اجازت صرف کھلی جگہوں پر ہوگی۔ پابندی کا نوٹی فکیشن جاری کردیا گيا ہے۔

مرحلہ وار اسکولز بند ہوسکتے ہیں

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات شبلی کا کہنا ہے کہ وباء بڑھ گئی تو ایسی صورت حال پیدا ہو جائے گی کہ اسپتالوں میں جگہ نہ ہو۔ یہ قومی ایشو ہے، ہمیں ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔ اسکولوں کو بھی مرحلہ وار بند کرنے کی طرف جا سکتے ہیں۔

You may also like

Leave a Comment