Home » اسکردوبیس پرچینی فوج کی موجودگی کی بھارتی خبریں جھوٹی،بےبنیادہیں،آئی ایس پی آر

اسکردوبیس پرچینی فوج کی موجودگی کی بھارتی خبریں جھوٹی،بےبنیادہیں،آئی ایس پی آر

by ONENEWS


آئی ایس پی آر نے بھارتی میڈیا میں چلنے والے جھوٹی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ اسکردو میں لائن آف کنٹرول کے ساتھ قائم ایئر بیس پر اضافی فوجی تعینات نہیں کیے ہیں۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر) کے ڈی جی میجر جنرل بابر افتخار نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری اپنے بیان میں کہا کہ بھارتی میڈیا کی جانب سے گلگت بلتستان میں ایل او سی پر اضافی فوج کی تعیناتی کی خبریں بے بنیاد اور جھوٹی ہیں، بھارتی میڈیا کی خبریں بے بنیاد اور سچ سے کوسوں دور ہیں۔

 ڈی جی آئی ایس پی آر نے پاکستان میں چینی فوج کی موجودگی کی سختی سے تردید کرتے ہوئے کہا کہ چین اسکردو میں کوئی پاکستانی ایئر بیس استعمال نہیں کر رہا۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی میڈیا غیر ذمہ دارانہ اور حقیقت سے ہٹ کر رپورٹنگ کر رہا ہے۔

پاکستانی وزیر خارجہ

پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پاک افواج کے اضافی دستوں کی تعيناتی ميں کوئی حقيقت نہيں۔ حکومت اور آئی ایس پی آر بھارت کی ہر حرکت کا نوٹس ليتے اور جواب بھی ديتے ہيں۔ بھارت کا بيانيہ جھوٹا ہے، وہ دم توڑ جائے گا۔

تجزیہ کار

بھارت کی جانب سے تازہ پراپگنڈے پر گفتگو کرتے ہوئے دفاعی تجزیہ کار نادر میئر کا کہنا تھا کہ بھارت تو بنا ہی جھوٹے پراپگنڈے کیلئے، اج پوری دنیا میں بھارت کی بربریت کی تصویر وائرل ہوگئی ہے، جو اس نے ایک 3 سالہ بچے کی آںکھوں کے سامنے اس کے نانا کے ساتھ کیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ بھارتی فوج کو چین کے ہاتھوں جو ہزیمت اٹھانی پڑی ہے وہ اس سے توجہ ہٹانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

بریگیڈیئر حارث نواز نے کہا کہ ہمیں بھارت کے خلاف کسی تیاری کی ضرورت نہیں، کیوں کہ ہمیں معلوم ہے کہ چالاک بھارت کیسے چالیں چلتا ہے، جب کہ بھارتی میڈیا اپنی عوام کو خوش کرنے کیلئے غلط رپورٹنگ کر رہا ہے۔

سما اسلام آباد کے بیورو چیف خالد عظیم کا کہنا تھا کہ بھارت چین کے ہاتھوں شکست اور ہزیمت کا غصہ پاکستان پر اتارنا چاہتا ہے، جو اس کی سب سے بڑی بھول ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اگر پاک فوج اپنے ملک میں کسی مقام پر تعینات کی جاتی ہے تو اس سے کسی کو مسئلہ نہیں ہونا چاہیے۔ بھارت کو اندرونی انتشار پر توجہ دینی چاہیے اور اگر اس نے پاکستان کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی تو اس کا نتیجہ بھی سب جانتے ہیں۔ بھارت آج تک اقوام متحدہ کے مبصرین کو مقبوضہ کشمیر اور چین کے بارڈر پر نہیں لے جاسکا کیوں ان کو مزید ہزیمت کا ڈر ہے۔

واضح رہے کہ بھارتی الیکٹرانک میڈیا پرپاکستان کی ایل اوسی پر اضافی ڈپلائیمنٹ کے جھوٹے دعوے کے ساتھ ساتھ چین کی طرف سے اسکردو ایئربیس کا استعمال کا جھوٹا الزام عائد کیا جارہا ہے۔





Source link

You may also like

Leave a Comment