Home » اسلام آباد ہائیکورٹ نے پی ٹی اے کو زونگ کے خلاف کارروائی سے روک دیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے پی ٹی اے کو زونگ کے خلاف کارروائی سے روک دیا

by ONENEWS


اسلام آباد ہائیکورٹ نے پی ٹی اے کو زونگ کے خلاف کارروائی سے روک دیا

اسلام آباد  (ابرارمصطفےٰ) اسلام آباد ہائی کورٹ نے  چائنا موبائل پاک (زونگ) کی درخواست پر مشروط حکم جاری کرتے ہوئے  پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کو موبائل فون کمپنی کے خلاف مزید کارروائی سے  روک دیا تاہم  پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی(پی ٹی اے) کی جانب سے عائد جرمانہ کے مساوی رقم کی بینک سیکورٹی عدالت میں جمع کرانے کا حکم جاری کیا ہے۔اس طرح عدالت نے   پی ٹی اے کے فیصلہ کی مکمل نفی نہیں کی ہے۔حتمی فیصلہ تک جرمانہ کے مساوی رقم کی بینک سیکورٹی عدالت میں جمع رہے گی۔پی ٹی اے نے چائنا موبائل پاک کو لائسنس کی متعدد  خلاف ورزیاں ثابت ہونے پر 100,000,000  روپے کا جرمانہ عائد کیا تھا۔  اس کے ساتھ ہی یہ حکم جاری کیا تھا کہ کمپنی کو باقاعدگی کے ساتھ موبائل فون سم کی  فروخت کی رپورٹ جمع کرانا ہوگی۔

چیئرمین پی ٹی اے  میجر جنرل (ریٹائرد)  عامر عزیز  باجوہ کی سربراہی میں اتھا رٹی نے چائنا موبائل پاک کے خلاف الزامات کی سماعت کی۔ اتھارٹی کے فیصلہ کی روشنی میں قرار دیا گیاکہ موبائل کمپنی لائسنس کے قوائد و صوابط کی خلاف ورزی کی مرتکب ہوئی ہے۔ جس میں موبائل فون سم کی فروخت میں قوانین کی خلاف ورزیاں ثابت ہوئی ہیں۔ان موبائل سم سے  غیر قانونی انٹر نیشنل کالز کی گئی ہیں  جس سے نا صرف قومی خزانہ کو بھاری نقصان پہنچا  بلکہ  دوسری موبائل فون کمپنیوں کو بھاری مالی نقصان پہنچ رہا ہے۔علاوہ ازین  چائنا موبائل کمپنی نے  سم کی فروخت  مقررہ   قیمت سے کم نرخوں  پر کی۔

مذکورہ کمپنی نے اپنے  ریٹلرز کو بھی کھلی چھٹی دے رکھی تھی ٹیلی کام اتھارٹی نے بار بار اس طرف توجہ دلائی لیکن  صورتحال میں کوئی بہتری نہیں آئی۔کمپنی کو فرنچائزوں اور ریٹیلرز کے حوالے سے بار بار تنبہ کی گئی کہ وہ  موبائل سم کی فروخت کے وقت ایس او پیز اوراتھارٹی کی جاری ہدایات پر سختی سے عمل درامد کریں۔لیکن فرنچائزوں اور ریٹیلرز  نے انتہائی  غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا اور لائسنس کی شرائط کی کھلی خلاف ورزی کی۔اس کے علاوہ سم کی فروخت اور نئے صارف کے شناختی کارڈ کی توثیق  سم کی ایکٹیویشن سے قبل انتہائی ضروری ہے چائنا موبائل کمپنی  کے ریٹیلرز اور فرنچائیز کے اہلکاروں نے  اس اہم قومی اور ملکی مفاد میں  بنائے گئے ایس او پیز کی  خلاف ورزی کی جس کا   ٹیلی کام  اتھارٹی نے بار بار تنبیہ کی تھی۔ اس پر مکمل طور پرعمل درامد نہیں کیا اور ان فرنچائیز زکے خلاف بھرپور ایکشن نہیں لیا گیا۔چند فرنچائیزز کے خلاف کارروائی کی رپورٹ دی گئی۔

ُپاکستان ٹیلی کام اتھارٹی نے اپنے فیصلہ میں قرار دیا ہے کہ چائنا موئل کمپنی کی طرف سے جمع کرائے  تحریری جواب اورزبانی دلائل میں مطابقت نہیں ہے۔اور یہ بات ثابت ہوگئی ہے کہ موبائل کمپنی لائسنس کے قوائد و ضوابط کی کھلی خلاف ورزی کی مرتکب ہوئی ہے۔اس کمپنی نے  وقتا فوقتا جاری کئے گئے احکامات او ر ہدایات کو مکمل طور پر نظر انداز کیا  ہے۔ لہذا الزامات ثابت ہونے پر ٹیلی کام اتھارٹی  کمپنی پر ایک سو ملین روپے کا جرمانہ عائد کرتی ہے کمپنی کو ہدایت کی جاتی ہے کہ فیصلہ موصول ہونے کے بعد دس روز میں جرمانہ ادا کر دیا جائے علاوہ ازیں کمپنی کو پابند کیا جاتا ہے کہ موبائل سم کی فروخت اور توثیق کی مکمل معلومات ہر تین ماہ کے بعد پی ٹی اے کے دفتر میں جمع کرائے۔

چائنا موبائل کمپنی نے پی ٹی اے کے حکم پر اسلام آباد  ہائی کورٹ  سے رجوع کیا۔ فاضل عدالت نے مشروط حکم جاری کرتے ہوئے کمپنی کو پابند کیا کہ وہ جرمانہ کی رقم کے مساوی بینک گارنٹی عدالت میں جمع کرائے۔

مزید :

سائنس اور ٹیکنالوجیعلاقائیاسلام آباد





Source link

You may also like

Leave a Comment